منشور

۔ 1۔تمام مسلمانوں کو ریسرچ کے لیے ایک پلیٹ فارم پر اکٹھا کرنا۔
۔ 2۔تمام مسلمانوں کو بلا تفرق فرقہ ۔ عمر۔ تعلیم۔ قوم ۔ جگہ اور شعبہ کے مشترکہ پلیٹ فارم پر لانا۔
۔ 3۔ طلباء و طالبات خصوصاً میٹرک تا پی ۔ ایچ۔ ڈی کو مختلف ذرائع سے ریسرچ کے حوالے سے ایجوکیٹ کرنا۔
۔ 4۔ سکولوں ۔ کالجوں اور یونیورسٹیوں میں ریسرچ کرنے والے طلباء و طالبات کو انعامات (کیش) دے کر حوصلہ افزائی کرنا۔
۔ 5۔ ریسرچ کرنے والے طلباء و طالبات اور دیگر سائنسدانوں کو معاشرے میں اہم اور نمایاں مقام دلانے کی بھر پور کوشش کرنا۔ ان کو معاشی پریشانیوں سے نجات دلانا۔
۔ 6۔ ڈویژن ۔ ڈسٹرکٹ لیول پر ریسرچ لیبارٹریز بنانا۔
۔ 7۔ ریسرچ کرنے والے طلباء و طالبات و سائنسدانوں کو سپانسر کرنا۔
۔ 8۔ ایجادات۔ اختراعات کو سوبر کے پلیٹ فارم سے مینو فیکچر کرنا۔ مارکیٹنگ کرنا اور پرموٹ کرنا۔
۔ 9۔ انڈسٹری کو سوبر سوسائٹی سے منسلک کرنا۔
۔ 10۔ ریسرچ کلچر میں آنے والے افراد کو ایک جگہ اکھٹا کرنے کے لیے ڈویژنل اور پھر ڈسٹرکٹ لیول پر سوبر ٹاؤن بنانا۔
۔ 11۔ سوبر ٹاؤن میں ممبران کو مفت پلاٹ دینا اور بنانے کے لیے قرضہ حسنہ کی سہولت دینا۔
۔ 12۔سوبر کے ممبران کی معاشی ترقی کے لیے پلاننگ کرنا۔
۔ 13۔ ہر ممبر کی معاشی ترقی۔ روزگار اور معقول انکم کے لیے پلاننگ کرنا۔
۔ 14۔ سوبر کو ایک زبردست مارکیٹنگ نیٹ ورک بنانا۔
۔ 15۔ہر شہر کے ٹاپ 10 یا 80% سے زائد نمبر لینے والے طلباء کی مالی سر پرستی کرنا۔
۔ 16۔ ریسرچ کرنے والے طلباء کو ہر قسم کی مالی ۔ علمی اور سماجی امداد کرنا۔
۔ 17۔ تین سال بعد سوبر کے ممبران کی اجتماعی شادیوں کا انتظام کرنا ۔ تاکہ مستقل طور پر ریسرچ کلچر کی راہ ہموار ہوسکے۔
۔ 18۔ حکومتوں پر زور دینا کہ ملکی سطح پر ریسرچ کلچر پیدا کریں۔
۔ 19۔ رسل ورسائل ۔ اخبارات۔ میڈیا کے ذریعہ ریسرچ کلچر پیدا کرنے کی کوشش کرنا۔
۔ 20۔ ملکی سطح پر مثبت تبدیلیوں کے لیے انقلابی اقدامات کرنا۔